اے عشق ہماری گلیوں میں

یوں  دل  نہ  لگے  نہ  درد  اٹھے
مت  روز  ملو  تو   اچھا   ہے
نہ  پیار  بڑھے  نہ  جھگڑا  ہو
تم   دور   بسو   تو   اچھا    ہے

کسی پھول سے ملتے چہرے کو
مری   دنیا   دیکھنا   چاہے   گی
گر  پاس  تمہارے  کچھ  بھی  نہیں
پردے  میں   رہو  تو   اچھا   ہے

لے  کر   زنجیریں   ہاتھوں   میں
کچھ   لوگ  تمہاری  تاک  میں  ہیں
اے  عشق   ہماری   گلیوں   میں
نہ   اور   پھرو   تو   اچھا    ہے

https://pakistanistoday.wordpress.com/wp-admin/

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s